User Rating:  / 1
PoorBest 

چوہے کا پیشاب پاک ہے ...!

 

صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین کو غیر فقیہ کہنے والے احناف کی فقاہت ملاحظہ فرمائیں کہ چوہے کا جوٹھا تو نجس ہے لیکن اسکا پیشاب پاک ہے , کیونکہ اسکی ضرورت ہے ۔ اب نہ جانے فقہائے احناف کو چوہے کے پیشاب کی کیا ضرورت  پڑ گئی ؟؟؟ شاید" شراب یوسفی " کی جگہ اب یہی "جام طہور" استعمال کرنا پڑتا ہو...!!!

ع ......... اس "فقاہت" پہ کون مر نہ جائے اے خدا ...!

ملاحظہ فرمائیں  کہ ابن نجیم حنفی اپنی کتاب الأشباہ والنظائر میں رقمطراز ہیں :

سُؤْرُ الْفَارَةِ نَجَسٌ لَا بَوْلُهَا لِلضَّرُورَةِ

چوہیا کا جوٹھا ناپاک ہے لیکن اسکا پیشاب ضرورت کی وجہ سے ناپاک نہیں ۔

 

الْأَشْبَاهُ وَالنَّظَائِرُ عَلَى مَذْهَبِ أَبِيْ حَنِيْفَةَ النُّعْمَانِ للشَّيْخ زَيْنُ الْعَابِدِيْنَ بْنِ إِبْرَاهِيْمِ بْنِ نُجَيْمٍ (926-970هـ) صفحه 407 , قديم طبعه صفحه 224

 

 
 
scroll back to top