User Rating:  / 0
PoorBest 

Lehaaza Iss ka Sahi Jawab yeh hai ke yeh Hazrat Ibn Umar ka apna Amaal aur Ijthaad hai , AHadeeth marfooh mei iss Taqreer ki koi Buniyaad Marwai nahi , Ni'az Sahabi ka Ijtihaad Hujjat Nahi , Khaas thor se Jabke iske Bil Muqabil doosre Sahaba ka Asaar uske Khilaaf Majood ho.


"لہٰذا اس کا صحیح جواب یہ ہے کہ یہ حضرت ابن عمر کا اپنا عمل اور اجتہاد ہے، احادیث مرفوعہ میں اس تفریق کی کوئی بنیاد مروی نہیں، نیز صحابی کا اجتہاد حجت نہیں، خاص طور سے جبکہ اس کے بالمقابل دوسرے صحابہ کے آثار اس کے خلاف موجود ہوں۔"

 

 

Dars e Tirmidi vol 1

 


Dars e Tirmidi page 191

scroll back to top